Intros 20and 20conclusions

مضمون نویسی میں ابتدایئہ اوراختتامیہ لکھنا


مضمون لکھنا ایک مشکل کام ہے۔لیکن مضمون کی اہمیت سے بھی انکار ممکن نہیں- اگر مضمون نویسی کا فن سیکھ لیا جائے تو آپ ایک کامیاب لکھاری بن سکتے ہیں- ایک اچھے مضمون میں پہلا پیراگراف جس میں موضوع کا تعارف اور آخری پیراگراف جس میں پورے مضمون کاخلاصہ ہوتا ہے، بہت سوچ بچار اور محنت سے لکھنا چاہئے کیونکہ یہ دونوں پیراگراف ہی مضمون میں جان پیدا کرتے ہیں-


تعارف 

تعارفی پیراگراف کے ذریٰعے سے ہی آپ اپنے قارئین سے رابظے میں آتے ہیں- اسی لئے پہلا پیراگراف جامع اور موضوع کے مطابق ہونا چاہئے- اگر اس پیراگراف میں قاری کی دلچسپی قائم ہو جائے گی تو وہ پورے مضمون میں دلچسپی لے گا- 

درج ذیل باتوں کا احاطہ تعارفی پیراگراف میں ہونا چاہئے:

۱۔ لکھنے کی وجہ

۲۔ تمام خیالات کا مختصر بیان

۳۔ سب سے اہم خیال پر گفتگو

ابتدائی پیراگراف لکھنے کے لئے ضروری ہے کہ آپ کا لکھنے کا انداز سادہ اور قارئین کی سمجھنے کی استطاعت سے میل کھاتا ہو- اس پیراگراف میں باتوں کو صرف تعارفی انداز میں تحریر کرنا ہوتا ہے تاکہ باقی مضمون میں انھی باتوں کی وضاحت شامل ہو سکے- تعارفی پیراگراف مختصر اہو جامع ہونا بہت ضروری ہے- اس طرح سے تعارف لکھنے سے قاری کی دلچسپی بھی ختم نہیں ہو گی- ایک اچھا تعارفی پیراگراف قاری کو پورا مضمون پڑھنے پر مجبور کر دے گا-

اگر تعارف اچھے انداز میں لکھا جائے تو قاری میں ایک تجسس پیدا ہو سکتا ہے کہ وہ مزید پڑھے، اس کے برعکس ایک برے تعارف سے آپ ایک اچھے مضمون کہ بھی برباد کر سکتے ہیں- مضمون کا پہلا پیراگراف کچھ سوالات کو جنم دیتا ہے جن کے جوابات اختتامی پیراگراف تک پورے ہو جاتے ہیں اور اختتامی پیراگراف ان جوابات کا خلاصہ بیان کرتا ہے-


اختتامیہ

اختتامیہ میں پورےمضمون کا ایک خلاصہ لکھا جاتا ہے- دراصل اختتامیہ ان تمام سوالوں کے جوابات کا احاطہ کرتا ہے جو ابتدایئہ میں پوچھے گئے تھے- ایک اچھے اختتامی پیراگراف میں درج ذیل خوبیاں ہونا ضروری ہیں:

۱۔ اختتامیہ پورے مضمون کا خلاصہ ہو-

۲۔ مضمون کا یہ حصہ پورے خیالات کا مکمل احاطہ کرتا ہو-

۳۔ تمام نتائج کے تحریر کرنے میں ایک ربط ہونا بہت ضروری ہے-

۴- اختتامیہ میں صرف ان موضوعات کو ہی کیا جائے جوپورے مضمون میں لکھے جاچکے ہیں- اس حصہ میں کوئی نئی بحث نہیں چھیڑنی چاہئے-



<<اوکسفرڈ لِونگ ڈکشنریز سے تحریر، صرف و نحو اور روزمرہ کے بارے میں مزید معلومات حاصل کریں<<


The opinions and other information contained in OxfordWords blog posts and comments do not necessarily reflect the opinions or positions of Oxford University Press.

Powered by Oxford