پہلی ملازمت حاصل کرنے کے لیے چند کارآمد باتیں

تعلیم مکمل کرنے کے بعد عام طور پر سب سے پہلی فکر ملازمت حاصل کرنا ہوتا ہے۔ پہلی ملازمت تلاش کرنے والا امیدوار عام طور پر نوجوان اور ناتجربہ کار ہوتا ہے۔ نوجوان ہونا تو ایک خوبی کے طور پر لیا جائے گا کیونکہ جوان آدمی زیادہ محنت کر سکتا ہے۔ یہ روزگار کی دنیا میں آپ کا سب سے اہم اثاثہ ہے۔ لیکن ناتجربہ کاری ملازمت کے جلد حصول میں رکاوٹ بن سکتی ہے۔ دفتر، فیکٹری اور کاروبار کا ماحول آپ کے تعلیمی ادارے کے ماحول سے مختلف ہوتا ہے۔ تعلیمی دنیا سے نئے نئے آنے والے کسی ناتجربہ کار کو کوئی کمپنی ملازمت پر رکھنے کا خطرہ مول نہیں لے گی کیوں کہ وہ کام بنانے کی بجائے بگاڑ بھی سکتا ہے۔

اب نوجوان کے لیے مسئلہ یہ ہے کہ جب تک کوئی ملازمت نہیں ملے گی تو تجربہ کہاں سے حاصل ہو گا؟ اس مشکل کا ایک اچھا اور اکثر استعمال ہونے والا حل ہے اور اسے انٹرن شپ کہتے ہیں۔ انٹرن کا مطلب ہے مددگار۔ یعنی ایسا تعلیم یافتہ نوجوان جو ابھی کام نہیں جانتا اور کام سمجھنے اور سیکھنے کے لیے کسی ماہر یا کاریگر کے مددگار یا شاگرد کے طور پر کام کرتا ہے۔

بہت سے طلبہ پڑھائی کے دوران ملنے والے وقفوں، جیسے گرمیوں کی چھٹیوں، موسم سرما کی تعطیلات وغیرہ میں کمپنیوں میں اپنی خدمات پیش کرتے ہیں۔ بڑی کمپنیاں سیکھنے کے ان خواہشمند نوجوانوں کو موقع دیتی ہیں۔ کبھی کبھار تو طلبہ کو اس کام کا کچھ معاوضہ بھی مل جاتا ہے۔ لیکن اگر یہ مفت بھی کرنا پڑے تو کام کا تجربہ تو حاصل ہو ہی جاتا ہے۔ انٹرن ہوتے ہی آپ کام کاج کی دنیا میں عملی قدم رکھ چکے ہیں۔ آپ کو تجربہ حاصل ہو رہا ہے۔

بعض نوجوان ایک سے زیادہ انٹرن شپس کر لیتے ہیں۔ اس تجربے کو اپنے سی وی یا ملازمت کی اپنی درخواست میں ضرور درج کیجیے۔ یہ ظاہر کرتا ہے کہ اب آپ اتنے بھی نا تجربہ کار نہیں ہیں۔ چند ہفتے یا چند ماہ ہی سہی، آپ تعلیمی دنیا چھوڑ کر عملی دنیا میں گزار چکے ہیں۔ اب کمپنی آپ کو اس گریجویٹ پر ترجیح دے گی جس نے انٹرن شپ نہیں کی۔

ان کمپنیوں اور اداروں کی فہرست بنائیں جو آپ کے شعبے سے متعلق ہیں۔ ان میں ملازمت کے حصول کے لیے درخواستیں بھیجیں۔ یہ اس وقت تک جاری رکھیں جب تک کہ انٹرویو کے لیے بلاوہ آ جائے۔ انٹرویو کی تیاری کیجیے۔ اس کمپنی یا ادارے اور کام کی نوعیت کے بارے میں معلومات حاصل کیجیے۔

ملازمت ڈھونڈنے کے کام کو بھی ایک طرح کی ملازمت ہی سمجھیں۔ صبح سویرے اٹھیں، اور جیسے کوئی شخص کام پر جاتا ہے، ویسے ہی ملازمت کی تلاش میں نکل جائیے۔ آج کل انٹرنیٹ کی وجہ سے آسانی ہو گئی ہے کہ اس کی مدد سے آپ نوکری کی تلاش، تحقیق، اور درخواست اور سی وی بھیجنے کا تمام عمل آن لائن کر سکتے ہیں۔

اس کے علاوہ میل جول یا نیٹ ورکنگ پر بھی دھیان دیں اور جس شعبے میں آپ کام کرنا چاہتے ہیں، اس میں پہلے سے کام کرنے والے لوگوں کے ساتھ تعلقات بنانے کی کوشش کریں، تاکہ ایک طرف تو آپ کو اس شعبے کے بارے میں زیادہ معلومات حاصل ہو سکیں، اور دوسری طرف وہ آپ کو باخبر رکھ سکتے ہیں کہ کہاں کوئی جگہ خالی ہے۔

انٹرویو کے روزمناسب لباس میں اور مناسب وقت پر پہنچ جائیے۔ آپ کا پہلا تاثر ہی اچھا ہونا چاہیے۔ انٹرویو کے دوران آ پ کا رویہ اور بیٹھنے کا انداز باوقار ہونا چاہیے۔ اپنے انٹرویو کرنے والوں کی طرف متوجہ رہیں۔ جب وہ آپ کو موقع دیں کہ کیا آپ کچھ پوچھنا چاہیں کے توآپ کو بھی کمپنی اور ذمہ داریوں کے حوالے سے سوالات پوچھنے چاہییں تاکہ کام میں آپ کی دلچسپی محسوس کی جا سکے۔ انٹرویو کے آخر میں شکریہ ادا کریں۔

پہلے انٹرویو سے واپس آ کر درخواستیں بھیجنے اور انٹرویوز پر جانے کا سلسلہ جاری رکھیں حتی کہ آپ کو پہلی ملازمت مل جائے۔ یہاں قدم جمائیں کیونکہ یہ ادارہ اور اس کے لوگ ملازمت کے طویل سفر کا پہلا قافلہ ہیں جو آپ کو آگے کے زیادہ بڑے قافلوں کی رفاقت دلائیں گے۔