Gabotse1

آداب تحریر

 

تحریروں کی مختلف اقسام ہیں مثلا مضامین' رپورٹس' خطوط' تقریریں ' ای میلز-ہر طرح کی تحریر کو لکھنے کا انداز مختلف ہوتا ہے کیونکہ ہر تحریر کا مقصد مختلف ہوتا ہے-  آپ کا انداز تحریر ایسا ہونا چاہئے کہ آپ  کا مقصد  پوری طرح حاصل ہو جائے- درج ذیل ہدایات کو زیرغور رکھ کر اچھی تحریر لکھی جا سکتی ہے


لکھنے کے مقصدسے  واقفیت 

 لکھنے سے پہلے آپ سوچیں کہ آپ کیوں لکھ رہے ہیں- مضامین یا اسائنمنٹ میں آپ کا مقصد حقائق اور معلومات کی فراہمی اور ان کی بنیاد پر نتائج اخذ کرنا ہے- لیکن اگر آپ کاروباری رپورٹ لکھ رہے ہیں توکسی ممکنہ عمل کے لیے سفارشات دینا بھی آپ کا مقصد ہو سکتا ہے - ایک  شکایتی  خط لکھتے وقت آپ کا مقصد  ایک مثبت جواب ہو گا جیسے رقم کی واپسی وغیرہ

دوران تحریر  اپنا مقصد ہمیشہ ذہن میں رکھیں اور اپنے اصل موضوٰع سے دور جانے سے گریز کریں


انداز تحریر کا انتخاب

دوران گفتگو ہم اپنے الفاظ اور خیالات کا انتخاب اپنے سامعین کی مطابقت سے کرتے ہیں - ہمارا  اپنے مینیجریا استاد سے گفتگو کا دوستوں کے ساتھ گفتگو کے انداز سے بالکل مختلف ہوتا ہے-  مختلف لوگوں سے ہم مختلف طرح سے بات کرتے ہیں-  اچھی تحریر کے لیے بھی ضروری ہے کہ ہم  یہی روش اپنایئں- لکھنے کا طریقہ ایسا ہوکہ جس قاری کے لیے آپ لکھ رہے ہیں وہ آسانی سے پڑھ کرسمجھ سکے اور جواب دے سکے- مختلف مقاصد کے تحت لکھائ کا طریقہ کار مختلف ہوتا ہے جیسا کہ تعلیمی لکھائ کا طریقہ  کاروباری لکھائ  اور بلاگ لکھنے کے طریقے سے مختلف ہے


منصوبہ کے ساتھ لکھنے کی ابتدا

 اکثر لوگ بغیر منصوبہ بندی کے لکھنا شروع کر دیتے ہیں جس کی وجہ سے  تحریر بے ترتیب ہو جاتی ہے اور مختلف حصوں میں کوئ رخیالات کا ربت نہیں رہتا- اگر آپ دس ہزار لفظ کی رپورٹ یا ایک مختصر شکائتی خط لکھنے جا رہے ہیں تو ایک واضح منصوبہ اور اس منصوبہ کے تحت بنا ہوا ایک مکمل خاکہ ہی ایک کامیاب اور پر اثر تحریر لکھنے میں مددگار ہو گا  


قاری کے لئے لکھیں اپنے لئے نہیں :

 آپ کا لکھنے کا مقصد اپنی تجاویز اور معلومات دوسروں تک پہنچانا ہے -ہر لفظ اور جملہ لکھتے ہوئے یہ مقصد آپ کے ذہن میں رہنا چاہئے- اپنے آپ سے پوچھتے رہیں جو کچھ لکھا ہے وہکس قاری کے لیے ہے

 آپ کو پتہ ہے جو لکھا ہے کیوں اور کس لیے لکھا ہے ورنہ آپ آسانی سے مقصد سے بھٹک سکتے ہیں- -بعض اوقات آپ قاری کو بالکل بھول کر اپنے لیے لکھنا شروع کر دیتے ہیںاس ترح نا صرف آپ کا وقت ضائع ہوتا بلکہ آپ دوسروں کا بہی وقت ضائع کر رہے ہوتے ہیں

 
قاری کی رہنمائ

آپکا کام پڑھنے والوں کی مدد کرنا ہے تاکہ وہ آپ کا پیغام  آسانی سے اور مکمل طور پر سمجھ سکیں- یہ ضروری ہے کہ ان کو پڑھ کر ہر چیز سمجھ آ جائے- ایک فقرے کا دوسرے فقرے سے اور ایک  پیراگراف کا دوسرے پیراگراف سے ربط ہونا بہت ضروری ہے- یہ ربط تحریر میں روانی لاتا ہے اور قاری کو آسانی سے سمجھ آ جاتی ہے 

تحاریر کا اصل مقصد یہ ہے کہ وہ عام فہم ہوں' اپنے مقاصد کو ظاہر کریں اور لکھنے والے کا پیغام قاری تک پہنچایئں 



<<اوکسفرڈ لِونگ ڈکشنریز سے تحریر، صرف و نحو اور روزمرہ کے بارے میں مزید معلومات حاصل کریں<<



OxfordWords بلاگ اور تبصروں میں موجود خیالات اور دوسری معلومات لازمی طور پر اوکسفرڈ یونیورسٹی پریس کے خیالات یا موقف کی ترجمانی نہیں کرتے۔

اوکسفرڈ کی زیرِ نگرانی