Interview tips808x234

انٹرویو کیسے دیں

ایک کامیاب انٹرویو ملازمت کے حصول میں نہایت اہم کردار ادا کرتا ہے۔ اگر امیدوار انٹرویو لینے والے کو اپنی صلاحیتوں کے بارے میں قائل نہ کر سکے تو ملازمت نہیں ملے گی اور امیدوار کی بہت سی محنت ضائع ہو جائے گی کیونکہ کئی درخواستیں بھیجنے کے بعد انٹرویو کا ایک بلاوہ آتا ہے۔ اس لیے انٹرویو کی اچھی تیاری کرنے کے علاوہ اچھے طریقے سے انٹرویو دینا بھی اہم ہے۔


تیاری

انٹرویو دینے سے پہلے اس ادارے کے بارے میں معلومات حاصل کیجیے جس میں ملازمت کے لیے آپ انٹرویو دینے جا رہے ہیں۔ اس سلسلے میں اس ادارے کی ویب سائٹ یا فیس بک پیج سے خاصی مدد مل سکتی ہے۔ یہ بھی جاننے کی کوشش کریں کہ اگر آپ کو ملازمت مل گئی تو آپ کیا کام کریں گے، اور اگر ادارہ آپ کا انتخاب کرے تو آپ ادارے کے لیے کیا کر سکتے ہیں؟ ایسے نکات کی فہرست بنائیے جن کی مدد سے آپ اپنے تجربے، تعلیم اور صلاحیتوں سے اس ادارے کی کارکردگی میں بہتری لا سکتے ہیں۔ 

یہ پتا چلائیے کہ عام طور پر انٹرویوز میں کیسے سوالات پوچھے جاتے ہیں۔ اس سلسلے میں سینئیرز سے بات کریں اور انٹرنیٹ کھنگالیں۔ اس کے بعد یہ سوچ لیں کہ ان سوالات کے آپ کیا جوابات دیں گے۔ یہ عمومی سوالات ہیں جو اکثر انٹرویوز میں پوچھے جاتے ہیں۔ ان کے لیے آپ کے جوابات کی تیاری کا مطلب ہوا کہ آپ نے اچھی خاصی تیاری کر لی ہے۔

اکثر انٹرویوز کے آخر میں امیدوار سے پوچھا جاتا ہے کہ اب آپ ادارے یا امیدوار کے انتخاب کے بارے میں کوئی سوال کریں۔ اس بات کو یقینی بنائیں کہ آپ کے پاس کم از کم ایک اچھا سوال ضرور ہونا چاہیے۔


انٹرویو کے دن

انٹرویو کے لیے اچھا لباس پہنیں۔ عام طور پر یہ لباس رسمی یا دفتری ہوتا۔ اچھے لباس میں نہ صرف آپ انٹرویو کرنے والے کو متا ثرکریں گے بلکہ خود بھی پراعتماد محسوس کریں گے۔

صحیح وقت پر پہںچ جائیں۔ چند منٹ پہلے پہنچ کر رپورٹ کرنا بہتر ہے لیکن بہت زیادہ پہلے نہیں۔ مناسب وقت پہلے پہنچ کرآپ ضرورت ہو تو فریش ہو سکیں گے۔ چند گہری سانسیں اور تھوڑا پانی پینا آپ کو پرسکون ہونے میں مدد دے گا۔


انٹرویو کے دوران

 پہلا تاثر بہت اہم ہوتا ہے، اس لیے آغاز سے ہی اچھا تاثر قائم کرنے کی کوشش کیجیے۔ پرسکون اور پر اعتماد انداز میں سوالوں کے جواب دیجیے۔ اکثر مرتبہ عام سوالات کے بعد ٹیکنیکل سوالات ہوتے ہیں۔ چونکہ آپ کی اپنے شعبے کے بارے میں معلومات مستند ہیں اس لیے بلا جھجک جواب دیجیے۔ ہاں، جوابات کو غیر ضروری طول دینے سے بچیں۔ اس دوران سوال پوچھنے والے کو غور سے دیکھتے رہیں۔ اس سے آپ کو الفاظ کے علاوہ غیرزبانی اظہار (نان وربل کمیونیکیشن) کی مدد سے سوال کی نوعیت اور مقصد کا تعین کرنے میں مدد ملے گی۔

جب کام کی نوعیت کے حوالے سے گفتگو ہو رہی ہو تو سمجھداری سے کام اور ذمہ داریوں کے حوالے سے کچھ اچھے اچھے سوالات پوچھیے۔ اس سے نہ صرف آگے کی گفتگو میں آپ کو مدد ملے گی بلکہ آپ کی کام میں دلچسپی اور ذمہ داری لینے پر آمادگی بھی نظر آئے گی۔

آپ کی گفتگو تو اہم ہے ہی، آپ کا بیٹھنے کا اندازاور جسمانی حرکات بھی آپ کے لیے اس ملازمت کے حصول میں مددگار یا مزاحم ہو سکتی ہیں۔ مناسب انداز میں بیٹھےانٹرویو کرنے والوں کی طرف متوجہ رہیں۔ ایسی حرکتوں سے، جیسے ہاتھوں سے بار بار بال درست کرنا، پین یا پینسل سے کھیلنا اورکرسی پر بہت ڈھیلے ڈھالے انداز میں دھںس کر بیٹھنا (جیسے آپ کے جسم میں جان ہی نہیں ہے) نہ صرف انٹرویو لینے والوں پر منفی اثر پڑے گا بلکہ آپ ملازمت حاصل کرنے کا موقع ہی ضائع کر بیٹھیں گے۔

ملازمت ضروری نہیں کہ ہمیشہ ہی سب سے قابل امیدوار کو ملے۔ زیادہ امکان یہ ہے کہ یہ اس کے حصے میں آئے گی جو یہ تاثر دینے میں کامیاب ہو جائے کہ وہی ادارے کے لیے سب سے کارآمد ہو گا اور مسائل حل کرے گا۔ اگر آپ بہت قابل ہیں تو بھی آپ کو انٹرویو لینے والے کو قائل کرنا ہو گا۔ پھر کامیابی آپ کے قدم چومے گی۔

جب انٹرویو اپنے اختتام کے قریب نظر آئے تو ان سے پوچھ لیجیے کہ اس کے بعد کیا اقدامات کرنا ہیں اور یہ کہ وہ کب تک فیصلہ کر لیں گے۔ اس کے بعد ان کا شکریہ اد کیجیے کہ انہوں نے اس انٹرویو کا موقع دیا اور اجازت کے ساتھ رخصت ہو جائیے۔

انٹرویو کے اگلے دن ایک ای میل کے ذریعے انٹریورز کا شکریہ ادا کیجیے کہ انھوں نے آپ کو ادارے میں بھرتی کے عمل کا حصہ بننے کا موقع دیا۔

اب پرامید رہیے کہ وہ آپ کو بلائیں گے لیکن خیال رہے کہ توجہ وہاں اٹکی نہ رہے۔ اس کے لیے بہترین یہ ہے کہ مزید درخواستیں بھیجنے کا سلسلہ جاری رکھیے تاکہ مزید انٹرویو کالز آئیں اور بآلاخر ملازمت ملنے کی خوشخبری آ جائے۔

See more from اردو مطالعہ